تازہ ترین

قطر میں زیڈان کی ٹکر والا متنازعہ مجسمہ دوبارہ نصب کرنے کی تیاری


قطر میں زیڈان کی ٹکر والا متنازعہ مجسمہ دوبارہ نصب کرنے کی تیاری

قطر نے ورلڈ کپ 2006 کے فائنل میں فرانس کے سابق فٹبالر زیڈان کی جانب سے اٹلی کے کھلاڑی مارکو میتارزی کو ٹکر مارنے کی منظر کشی کے مجسمے کو دوبارہ نصب کرنے کی تیاری شروع کردی ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ’کوپ دی ٹیٹے‘ نامی 5 میٹر طویل کانسی کے مجسمے کو فرانسیسی مجسمہ ساز عدل عبدالصمد نے 2013 میں تیار کیا تھا جس کو دوحہ میں تنصیب کے کچھ عرصے بعد ہی مذہبی طبقے کی جانب سے تنقید کے بعد ہی ہٹادیا گیا تھا۔

تاہم اب دوبارہ اس کو نصب کرنے کا عندیہ قطر میوزیم کی سربراہ اور امیر قطر کی ہمشیرہ شیخہ المیاسہ الثانی نے ایک حالیہ گفتگو کے دوران کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا معاشرے ارتقا کے عمل سے گزرتے ہیں جس میں وقت لگتا ہے، لوگ شروع میں کسی چیز پر تنقید کرسکتے ہیں لیکن پھر اسے سمجھتے ہیں اور پھر اس کی عادت ڈال لیتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دارالحکومت کے ساحل پر جس جگہ مجسمہ نصب کیا گیا تھا وہ ٹھیک نہیں تھی لہذا اب مجسمے کو دوحہ کے ایک نئے اسپورٹس میوزیم میں نصب کیا جائے گا۔

امیر قطر کی ہمشیرہ کا کہنا تھا کہ نمائش کا مقصد کھلاڑیوں میں تناؤ اور دماغی صحت کے مسائل سے نمٹنے کی اہمیت کے بارے میں گفتگو کو فروغ دینا تھا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آرٹ کسی بھی دوسری چیز کی طرح ذائقے کا معاملہ ہے، ہمارا مقصد لوگوں کو بااختیار بنانا ہے جبکہ زیڈان تو قطر کے عظیم دوست ہیں اور وہ عرب دنیا کے لیے ایک بہترین رول ماڈل بھی ہیں۔

واضح رہے کہ یہ مجسمہ ورلڈ کپ 2006 کے فائنل میں اضافی وقت کے دوران اس لمحے کی عکاسی کرتا ہے جب زیڈان نے اٹلی کے مارکو ماترازی کو سر سے ٹکر ماری تھی۔

زیڈان کو اس فعل کے بعد میدان سے باہر کردیا گیا تھا جس کے بعد اٹلی نے فرانس کو پنالٹی پر شکست دی تھی۔

خیال رہے کہ کچھ قدامت پسند ناقدین نے اس مجسمے کی تنصیب کو مسلم ملک میں بت پرستی کو فروغ دینے کا محرک قرار دیا تھا جبکہ کچھ ناقدین نے اسے تشدد کی حوصلہ افزائی سے بھی تعبیر کی تھی۔

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button